Videos » ریلی سے مولانا محمد الیاس گھمن کے خطاب

ریلی سے مولانا محمد الیاس گھمن کے خطاب

آپ حضرات کےعلم میں ہوگا کہ پچھلے کچھ دنوں سے ملک پاکستان میں توہین رسالت کے قانون میں ترمیم کی ناپاک کوششیں زوروں پر ہیں اور ایک لادین طبقہ اس میں پیش پیش ہے اس سلسلہ میں ملک بھر میں دینی اور بعض سیاسی جماعتیں مل کر اس قانون میں ممکنہ ترمیم کے خلاف تحریک ناموس رسالت صلی اللہ علیہ وسلم کے نام سے یک جان ہوچکے ہیں اور اپنی جدوجہد کو جاری رکھتے ہوئے پورے ملک میں پرامن ریلیاں اور جلسہ ہاَئے عام منعقد کررہے ہیں اس سلسلہ کی پہلی کڑی 9 جنوری کو کراچی کی سرزمین پر ایک پر امن ریلی کی صورت میں نظر آئی جس میں کم وبیش 10 لاکھ افراد نے شرکت کی اور یہ ثابت کردیا کہ ناموس رسالت صلی اللہ علیہ وسلم کے لیے ہر مسلمان اپنی جان تک دینے کو تیار بیٹھا ہے۔ اس کے بعد دوسری ریلی مورخہ 30 جنوری 2011 کو پنجاب کے صوبائی دار الحکومت لاہور میں ہوئی اس ریلی میں لاہور اور مضافات لاہور سے آنے والے قافلوں نے شرکت کی یہ قافلے ناصر باغ میں اکٹھے ہوئے اور پھر قائدین کے ساتھ اسمبلی ہال تک پہنچے۔ تمام شرکاء اس بات کے لیے جمع ہوئے کہ حکومت توہین رسالت قانون میں ترمیم نہ کرے اور نبی پاک صلی اللہ علیہ وسلم کے گستاخ کو قتل ہی کیا جائے کیونکہ یہ فیصلہ قرآن کریم کا ہے۔ یہاں ایک بات کا ذکر ناگزیرہے کہ چند نام نہاد دانش وروں نے میڈیا پر آکر یہ بیان بازی شروع کر رکھی ہے کہ توہین رسالت کے مرتکب کی سزا قتل نہیں ہے اور ان میں سرفہرست نام جاوید غامدی کا ہے۔ تیس جنوری کی اس ریلی میں متعدد علمائے کرام اور سیاسی رہنماوں نے اپنے اپنے بیانات فرمائے اور متکلم اسلام مولانا محمد الیاس گھمن حفظہ اللہ بھی اس محفل میں خصوصی طور پر مدعو تھے آپ نے اپنے مختصر سے بیان میں حکومت وقت کو بھی اللہ کی نافرمانی سے باز رہنے کو کہا اور جاوید غامدی کو بھی دلائل کی بنیاد پر چیلنج دیا ہے ہم اپنے ممبران کی وساطت سے گزارش کرتے ہیں کہ جاوید غامدی تک متکلم اسلام کا یہ پیغام ضرور پہنچایا جائے متکلم اسلام کا یہ بیان اپ لوڈ کردیا گیا ہے۔ مزید اس مسئلہ پرمتکلم اسلام مولانا محمد الیاس گھمن خصوصی طور سے اپنے بیان ریکارڈ کرانے والے ہیں۔ آپ بھی اس میں دعا گو رہیں اللہ ہم سب کو اپنے محبوب صلی اللہ علیہ وسلم کی ناموس کا محافظ بنائے ۔ آمین یا رب العالمین
Posted February 2, 2011 - # 
click to rate

Embed  |  576 views